کورونا وائرس
پاکستان میں
مصدقہ کیسز
(+7,539 ) 1,393,887
اموات
(+25) 29,162
صحتیاب مریض
1,272,871
فعال کیسز
91,854
Last updated: جنوری 27, 2022 - 2:43 شام (+05:00) دوسرے ممالک
Home / جائیدادکی ویلیوکاتعین : ایف بی آرکوبڑاجھٹکا

جائیدادکی ویلیوکاتعین : ایف بی آرکوبڑاجھٹکا

FBR asked to withdraw new property valuations

ویب ڈیسک ۔۔ سینیٹ کی قائمہ کمیٹی نےفیڈرل بورڈآف ریونیو(ایف بی آر) کوملک کے40شہروں میں غیرمنقولہ جائیدادکی ویلیوایشن میں100سے700فیصداضافےکاحکمنامہ واپس لینےکی ہدایت کردی۔

سینیٹرزکے مشاہدات اور رئیل اسٹیٹ اسٹیک ہولڈرز کے احتجاج کی بنیاد پر جے یو آئی کے سینیٹر طلحہ محمود نے سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے فنانس اینڈ ریونیو کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے ایف بی آر کو ہدایت کی کہ وہ سب کی مشاورت سے ایک نظرثانی شدہ ویلیوایشن ٹیبل اگلے15روزکےاندرتیار کرے۔

انہوں نےکہاکہ ریونیو حکام کی جانب سے متعلقہ اسٹیک ہولڈرز کو اعتماد میں لیے بغیریکطرفہ اقدامات کرنا نامناسب ہے اور ایسی پالیسیاں نہ تو کاروبار اور نہ ہی خود ایف بی آر کے مفاد میں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کاروباری لین دین کو عملی جامہ پہنانے کے لیے وقت درکار ہوتا ہے۔ اس لیے ایک طریقہ کار اور ٹائم فریم بھی ہونا چاہیے تاکہ جوسودےفائنل ہوچکےہیں وہ کسی نئےحکمنامےکےفوری نفاذسےمتاثرنہ ہوں۔

سینیٹرطلحہ محمودکاکہناتھاکہ فیصلہ سازی اسٹیک ہولڈرز کی شمولیت پر مبنی ہونی چاہیے لیکن جب حکومتی اداروں اور اسٹیک ہولڈرز کے درمیان اعتماد کا فقدان ہو تو معاشی بہتری اور محصول میں اضافے کی توقع نہیں کی جا سکتی تھی۔

رئیل اسٹیٹ ڈیلرزپرایف بی آرنےکڑی شرط لگادی

کمیٹی نے ہدایت کی کہ نئے طریقہ کار کے لیے مشاورتی عمل کے دوران سابقہ ​​ضابطے اور انتظامات بحال رکھےجائیں تاکہ کاروبار معمول کے مطابق چل سکیں۔ مستقبل کے تمام ضابطوں کے لیے ایف بی آر کو چاہیے کہ وہ کاروباری طبقےکےنئےرول سمجھنےاوران پرعملدرآمدکے لیے کافی وقت فراہم کرے۔

آئی ایم ایف کاایک اورحکم پوراکرنےکی تیاریاں

ایف بی آرچیئرمین ڈاکٹر اشفاق احمد نے کمیٹی کو بتایا کہ جائیدادوں کی نظرثانی شدہ ویلیوایشن کا مقصد غیرمنقولہ جائیدادوں پر مارکیٹ کی قیمتوں کی بنیاد پر بتدریج ٹیکس لگانا ہے۔ انہوں نے کہا کہ چند سال پہلے تک جائیدادوں کی حقیقی تشخیص کا کوئی مناسب نظام موجود نہیں تھا اور صوبےاس معاملےپراتفاق رائے تک پہنچنے کے لیے تیار نہیں تھے۔

ٹیکس دہندگان کی خفیہ معلومات خطرےمیں

پراپرٹی ڈیلرز اور راولپنڈی اور اسلام آباد چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹریز کے نمائندوں کا کہنا تھا کہ ایف بی آر نے انہیں اعتماد میں لیے بغیر اور اچانک نئے ویلیوایشن ٹیبل لگائے ہیں جس کے نتیجے میں پراپرٹی کے لین دین مکمل طور پر رک گئے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ لوگوں نے سیل پرچیز کنٹریکٹ پر دستخط کیے تھے لیکن ٹرانسفر کے وقت حیران رہ گئے کہ ان کے ٹیکس کی شرح 100 سے 700 فیصد تک بڑھ گئی ہے۔

ٹریک اینڈٹریس سسٹم ذخیرہ اندوزوں کوپکڑےگا

ایف بی آرکاسٹیٹ بنک کی خدمات لینےکافیصلہ

دوسری جانب ایف بی آر نے پراپرٹی کی قیمتوں پر مسائل کو حل کرنے کے لیے سٹیٹ بینک کے ماہرین کی خدمات لینے کا فیصلہ کرلیا۔ ایف بی آراعلامیے کے مطابق جائیدار کی ویلیوایشن کو مارکیٹ کی سطح کے قریب رکھنے کی کوشش کی گئی ہے لیکن ایف بی آر کو جائیدار کی ویلیو ایشن مارکیٹ سے زائد ہونے کی اطلاعات ملی ہیں۔

اعلامیےکےمطابق ویلیو ایشن کے تعین پر پیدا ہونے والے مسائل کو حل کیا جائیگا جس کے لیے سٹیٹ بینک کے پراپرٹی ویلیو ایشن ماہرین کی خدمات حاصل کی جائینگی۔ یہ ماہرین ، سٹیٹ ایجنٹس اور ڈیویلپرز سے بھی مشاورت کرینگے۔ ایف بی آر کا کہنا ہے کہ پراپرٹی کی قیمت کو مارکیٹ کی قیمت کے قریب لایا جایگا۔

یہ بھی چیک کریں

CDNS digital investment in Pakistan

یہ ڈیجیٹل سرمایہ کاری کیاہے؟

ویب ڈیسک ۔۔ سنٹرل ڈائریکٹوریٹ آف نیشنل سیونگز نے سرمایہ کاری کے مواقع کو بڑھانے …