Home / توہین مذہب کےکیسوں میں انتہائی احتیاط سےکام لیاجائے:سپریم کورٹ

توہین مذہب کےکیسوں میں انتہائی احتیاط سےکام لیاجائے:سپریم کورٹ

SC on blasphemy cases

ویب ڈیسک ۔۔ سپریم کورٹ نےریاستی اداروں کوحکم دیاہےکہ وہ توہین مذہب کےکیسوں کوڈیل کرتےوقت انتہائی احتیاط کامظاہرہ کریں۔

لاہورویسٹ کمپنی میں بطورخاکروب ملازمت کرنےوالےسلامت منشامسیح کی درخواست ضمانت کےکیس میں عدالت عظمیٰ کےجسٹس قاضی فائزعیسیٰ اورجسٹس منصورعلی شاہ پرمشتمل ڈویژن بنچ نےاپنےفیصلےمیں لکھاکہ توہین مذہب جیسےحساس کیسوں کوبڑےپیمانےپرپبلسٹی ملتی ہےجس کےمنفی اثرات ہوتےہیں جومنصفانہ ٹرائل کوبھی خطرےمیں ڈال سکتےہیں۔

عدالت عظمیٰ نےنوصفحات پرمشتمل فیصلےمیں لکھاہےکہ غیر ذمہ دارانہ اور سنسنی خیز نشریات اور اشاعتیں وہی دہراتی ہیں جو مبینہ طور پر ملزم نے کہا یا کیا تھا۔ جو لوگ اسے دہراتے ہیں وہ خود بھی اسی جرم کا ارتکاب کر رہےہوتے ہیں۔

جسٹس فائزعیسیٰ نےفیصلےمیں لکھاہےکہ توہین مذہب کےکیس میں دفعہ 295سی کےتحت سزاصرف موت ہے۔ اس لئےتمام متعلقہ افرادکوانتہائی احتیاط سےکام لیناچاہیےتاکہ انصاف کی فراہمی میں کوئی کوتاہی نہ رہے۔

عدالت عظمیٰ کے فیصلے میں اس بات کا بھی نوٹس لیا گیا کہ کس طرح ذاتی دشمنی کو طے کرنے کے لیے کئی بارجھوٹےالزامات لگائےجاتے ہیں اور مقدمات بھی غلط یاخفیہ مقاصدکیلئےدرج کیےجاتے ہیں۔

عدالت نے کہا کہ توہین مذہب سے متعلق جرائم کے سلسلے میں اسلامی فقہی اصولوں کےتحت ملزم کوفئیرٹرائل کاحق ملناچاہیے۔

یہ بھی چیک کریں

Maryam Aurengzeb harassment

مریم اورنگزیب کی ہراسانی،پی ٹی آئی سپورٹرزکی مذمت

ویب ڈیسک ۔۔ لندن میں وفاقی وزیراطلاعات مریم اورنگزیب کےساتھ تحریک انصاف کےچندکارکنوں کی بدتمیزی …