Home / میاں منشا – کامیابی کی حیرت انگیزداستان

میاں منشا – کامیابی کی حیرت انگیزداستان

Mian Mansha - Life, career and net worth

ویب ڈیسک ۔۔ میاں محمد منشاپاکستان کےکامیاب ترین اوردولت مندترین کاروباری شخص ہیں۔ ملکی وبین الاقوامی سطح پرشہرت کےحامل میاں منشاملک کےمعروف کاروباری ادارےنشاط گروپ کے بانی اور سی ای او ہیں۔ میاں منشااوران کےخاندان کےقریبی افراد پاکستان کے امیر ترین اور سب سے زیادہ ٹیکس ادا کرنےوالےافرادمیں شامل ہیں۔

2017میں میاں منشاکانام پیراڈائز پیپرزمیں سامنےآیا جس کا تعلق آف شورکمپنی سے تھا۔

ابتدائی زندگی اورکیریئر
1930کی دہائی میں منشاخاندان پنجاب سےکولکتہ، بنگال ہجرت کر گیا تھا۔ قیام پاکستان کےبعدیہ خاندان پاکستان کےعلاقےلائلپوریعنی فیصل آبادمیں آکرآبادہوگیاجہاں میاں محمد منشا کےوالد نےکاٹن جننگ کاکاروبارشروع کیاجوترقی کرتےکرتےنشاط ٹیکسٹائل ملزبن گیا۔

انہوں نے اپنی ابتدائی تعلیم سیکرڈ ہارٹ کانونٹ، فیصل آباد سے حاصل کی، اور بعد میں بزنس ایڈمنسٹریشن میں اعلیٰ تعلیم کے لیےلندن چلےگئے۔

کیرئیر
انہوں نے اپنے کیریئر کا آغاز پاکستان کے ممتاز صنعت کاروں میں سے ایک کے طور پر کیا۔ نشاط ٹیکسٹائل ملز ان کے والد اور چچا نے 1951 میں شروع کی تھی۔ 1968 میں لندن سے اپنی تعلیم مکمل کرنے کے بعد واپس آنے کے ایک سال بعد ان کے والد کا انتقال ہو گیا۔ میاں محمد منشا نے 1969میں خاندانی کاروبار میں شمولیت اختیار کی اورکچھ عرصےبعدوہ اپنے چچا سے الگ ہو گئےاورخاندانی کاروبار سنبھال لیا۔ 2013 میں اس خاندان کےاثاثوں کی مالیت 2.5 بلین امریکی ڈالر تھی۔ اس وقت نشاط ٹیکسٹائل ملز پاکستان کی سب سے بڑی فیبرک مینوفیکچرنگ ملز ہیں۔

1979کےبعد میاں منشانےفیصل آبادشہرکےعلاقےنشاط آباد میں سات فیکٹریوں پرمشتمل پاکستان کاسب سےبڑا ٹیکسٹائل کمپلیکس قائم کیا۔ کچھ عرصےبعدانہوں نے لاہورکےقریب چونیاں میں ایک اور ٹیکسٹائل کمپلیکس قائم کیا۔

میاں منشا کےگروپ کو1990 کی دہائی کی حکومتوں کی نجکاری مہم سے بہت فائدہ ہوا۔ اس عرصےمیں منشاگروپ نے بہت سی خریداریاں کیں، جن میں انجینئرنگ کی ایک فرم بھی شامل تھی ۔ اسی دوران منشاگروپ نے ملک کی سب سے بڑی نان لائف انشورنس کمپنی آدم جی انشورنس میں کنٹرولنگ پوزیشن حاصل کر لی۔

نشاط ملز نے پنجاب کے ضلع ڈیرہ غازی خان میں واقع اپنی ڈی جی خان سیمنٹ فیکٹری کے قریب دو تھرمل پاورپلانٹس بھی حاصل کیے جو پہلے سہگل خاندان کی ملکیت تھے۔ پاکستان میں کاروباری تجزیہ کاروں نے مبینہ طور پر کہا کہ دو تھرمل پاور پلانٹس کا حصول نشاط گروپ کے لیے ڈی جی خان سیمنٹ فیکٹری کو بجلی کی بلاتعطل فراہمی کو یقینی بنائے گا۔ ان بڑی خریداریوں سے گزرتے ہوئے، وہ بیک وقت اپنے نشاط ٹیکسٹائل کے شعبے کو بڑھاوادیتےرہے۔

بات یہیں پرختم نہیں ہوتی۔ پاکستان کے سب سے زیادہ منافع بخش بینکوں میں سے ایک،مسلم کمرشل بینک بھی میاں منشاکی ملکیت ہے۔ آج، ایم سی بی بینک ملک کے سرفہرست 4 بینکوں میں سے ایک ہے اور تقریباً 18,000 ملازمین کی بڑی تعداد کے ساتھ مارکیٹ کیپٹلائزیشن کے لحاظ سے سب سے آگے ہے۔

میاں منشا نے نشاط پاورسٹیشنوں پر پیدا ہونے والی اضافی بجلی کی واپڈاکوفروخت سےاپنےکاروبارکومزیدوسعت دی ہےاوراس وقت نشاط پاورایک ترقی کرتاہواکاروبارہےجس کی دیکھ بھال میاں منشاکےبیٹےکرتےہیں۔

ایم سی بی بینک نے 2008 میں ملائیشیا کےمےبینک کے ساتھ شراکت داری شروع کی۔ مے بینک کا اب ایم سی بی بینک میں 20 فیصد حصہ ہے۔ 2009میں میاں محمد منشا نے کہا کہ ان کی کوشش ہےکہ پاکستان میں غیر ملکی سرمایہ کاری کو جاری رکھنے میں کامیاب رہیں اور ان کا بینک مے بینک کے ساتھ معاہدے کے بعد ملائیشیا سے پہلے ہی 970 ملین امریکی ڈالر کی سرمایہ کاری ملک میں لا چکا ہے۔ 2010 میں فوربس میگزین کےمطابق، وہ دنیا کے937 ویں امیر ترین اور پاکستان کے امیر ترین شخص تھے۔

نشاط گروپ قازقستان میں آٹوموبائل لیزنگ کمپنی کا بھی مالک ہے۔ مزید منصوبوں میں پاکستان میں بنیادی ڈھانچے کے بڑے منصوبے شامل ہیں، جیسے کوئلے سے چلنے والی بجلی گھراور سمندری بندرگاہوں پر مبنی برقی پاور پلانٹس کی تعمیر۔

کامیابیاں اور ایوارڈز
میاں منشا اس وقت پاکستان کے مختلف ممتاز اداروں کے بورڈ میں شامل ہیں اور ان کا شمار ملک کے طاقتور اور بااثر لوگوں میں ہوتا ہے۔ انہیں 23 مارچ 2004 کو صدر پاکستان پرویز مشرف نے ستارہ امتیاز سول ایوارڈ سے نوازا تھا۔ میاں منشا کی کمپنیوں میں سے ایک، نشاط ٹیکسٹائل ملز لمیٹڈ، پاکستان میں سب سے بڑا برآمد کرنے والا ادارہ ہے۔

ذاتی دولت
میاں منشا کو 2008 میں ڈیلی پاکستان نے 2.5 بلین امریکی ڈالر کی مجموعی مالیت کے ساتھ 200 بلین روپے کے برابر امیر ترین پاکستانی قرار دیا تھا۔ مارچ 2010 میں، منشا فوربز کی ارب پتیوں کی فہرست میں جگہ بنانے والے پہلے پاکستانی ہیں۔

میاں منشارینج روور، پورشے،بی ایم ڈبلیواورمرسیڈیزسمیت کئی قیمتی گاڑیوں اورایک عددجیٹ طیارےکےمالک ہیں۔

پاک بھارت تعلقات

پاک بھارت تعلقات کےحوالےسےمیاں منشاکہتےہیں پاکستان اور بھارت کو غربت کا مقابلہ کرنے کے لیے آگے بڑھنا ہوگا۔ انہوں نےکہاکہ اگر معاملات ٹھیک ہوجائیں تو مودی کو پاکستان کا دورہ کرنے میں ایک مہینہ نہیں لگے گا۔

کرپٹ کرپٹ کی داستان چھوڑیں

میاں محمد منشا نے یہ بھی کہا کہ کرپٹ کرپٹ کی گردان چھوڑ کر ملک کو بچانا ہوگا، معیشت ٹھیک نہ ہوئی تو خدانخواستہ ایک اور بنگلہ دیش بن جائے گا۔

نیب کوبندکریں

انہوں نے کہا کہ قومی احتساب بیورو (نیب) روز کسی نہ کسی کی پگڑی اچھال رہا ہوتا ہے، نیب کو بند کردینا چاہیے۔

یہ بھی چیک کریں

Maryam Nawaz acquittal in Avenfield reference

ایون فیلڈریفرنس ختم ۔۔ مریم نوازبری

مانیٹرنگ ڈیسک ۔۔ مسلم لیگ ن کیلئےبڑاریلیف ۔ اسلام آبادہائیکورٹ نےایون فیلڈریفرنس میں مریم نوازاوران …