Home / ایک اورتاریخی مسجدہندوانتہاپسندوں کےنشانےپر

ایک اورتاریخی مسجدہندوانتہاپسندوں کےنشانےپر

Gyanvapi Masjid India

ویب ڈیسک ۔۔ بھارت میں تاریخی بابری مسجدکی شہادت کےبعدایک اورمشہورمسجدہندوانتہاپسندوں کےنشانےپر۔

تفصیلات کےمطابق بھارتی ریاست اترپردیش کی عدالت نے شمالی بھارت کی مشہورگیان واپی مسجد میں سروے ٹیم کی جانب سےمبینہ طورپرہندو دیوتاشیواوردیگرہندومذہبی نشانیاں ملنےکےبعدمسلمانوں کواس مسجدمیں نمازیوں کی تعداد کم کرکےبیس کرنےکاحکم دےدیا۔

عدالت نےسروےٹیم کوملنےوالی مبینہ مذہبی نشانیوں کودرست مانتےہوئےمسجدکےایک حصےکوہندووں کی عبادت کیلئےمختص کرنےکی تجویزدی ہے۔

گیان واپی مسجدکےبارےمیں بھی ہندوانتہاپسندوں کاوہی خیال ہےجوبابری مسجدکےبارےمیں تھاکہ اسےمسلمانوں نےمندرگراکرتعمیرکیاتھا۔

واضح رہےکہ گیان واپی نامی یہ مسجدتاریخی مسجدکےطورپرجانی جاتی ہےاوریہ ہندووں کےتاریخی مذہبی شہروارانسی میں ہےجوبھارتی وزیراعظم نریندرمودی کاحلقہ انتخاب ہے۔

ادھر بھارتی مسلمان رہنماءوں کا خیال ہے کہ اس قسم کےاقدامات سےایک بارپھریہ بات ثابت ہوتی ہےکہ بھارت میں انتہاپسندبی جےپی حکومت مذہبی اقلیتوں کوآزادی سےعبادت کاحق دینےپرتیارنہیں۔

اترپردیش کے وزیراعلیٰ اور بی جے پی کے رہنما کیشیو پراساد موریا نےعدالت کے فیصلے کا خیرمقدم کیا ہے اور ہم اس پر عمل کریں گے۔

دوسری جانب اپنے متنازعہ اور فرقہ وارانہ بیانات اور نفرت پھیلانے کے لیے مشہور، بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے رہنما سنگیت سوم نے دھمکی دی ہےکہ بابری مسجدکی طرح اب گیانواپی مسجدکوبھی گرادیاجائےگا۔

یہ بھی چیک کریں

Tata Sons ex chairman dies in road accident

معروف بھارتی بزنس مین حادثےمیں ہلاک

ویب ڈیسک ۔۔ بھارت کےبڑےکاروباری خاندان کےچشم وچراغ اورملک کی معروف کمپنی ٹاٹا سنزکے سابق …