کورونا وائرس
پاکستان میں
مصدقہ کیسز
(+705 ) 1,271,027
اموات
(+9) 28,414
صحتیاب مریض
1,219,174
فعال کیسز
23,439
Last updated: اکتوبر 29, 2021 - 1:27 صبح (+05:00) دوسرے ممالک
Home / فرانسیسی سفیرکی بدری تک احتجاج جاری رکھنےکااعلان

فرانسیسی سفیرکی بدری تک احتجاج جاری رکھنےکااعلان

Tehreek e Labaik Pakistan

ویب ڈیسک ۔۔ تحریک لبیک پاکستان (ٹی ایل پی) کے سربراہ علامہ سعد حسین رضوی کی گرفتاری کےخلاف ملک کے مختلف حصوں میں ہونے والے احتجاجی مظاہرے دوسرے روز بھی جاری ہیں۔ اس دوران پولیس اورمظاہرین کےدرمیان جھڑپوں اورپرتشددواقعات میں2 افراد ہلاک جبکہ پولیس اہلکاروں سمیت متعدد افرادکےزخمی ہونےکی اطلاعات ہیں۔۔

ایک بیان میں تحریک لبیک پاکستان نے احتجاجی دھرنے ختم کرنے کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ دھرنے ختم کرنے کی خبروں میں کوئی صداقت نہیں، فرانس کا سفیر ملک بدر ہونےتک دھرنے جاری رہیں گے۔

ٹی ایل پی ترجمان طیب رضوی کےمطابق جب تک علامہ سعد حسین رضوی خود حکم نہیں دینگے،انکےدھرنےملک بھرمیں جاری رہیں گے۔انہوں نےکہاکہ جن مقامات سے انتظامیہ نے دھرنا ختم کرایا ہے وہاں کارکنان احتجاج کے لیے دوبارہ پہنچیں گے، ساتھ ہی ترجمان ٹی ایل پی نے دعویٰ کیا کہ ملک بھر میں تحریک لبیک کے 12 کارکنان کو مارا جاچکا ہے۔

ملک کے مختلف حصوں میں اس وقت احتجاجی دھرنوں کےباعث کئی اہم سڑکیں اور شاہراہیں بند ہونے کی وجہ سے شہریوں کو سخت مشکلات کا سامنا ہے جبکہ کچھ مقامات پر پولیس اور ٹی ایل پی کارکنان کی جھڑپیں بھی ہوئی جس کے نتیجے میں متعدد افراد کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں۔

اس وقت لاہور، کراچی ، راولپنڈی ، اسلام آباد،ملتان،ڈیرہ غازی خان سمیت ملک کےبیشترعلاقوں میں تحریک لبیک کےدھرنےاوراحتجاج جاری ہیں جس کی وجہ سےسڑکوں پرٹریفک کادباوشدیدہےاورعام شہریوں کوسخت پریشانی کاسامناہے۔

دوسری جانب وزارت داخلہ میں ایک اہم اجلاس ہواجس میں فیصلہ کیاگیاکہ بندراستوں کوہرصورت کھلوایاجائےگااورنقص امن کاباعث بننےوالوں کےخلاف سخت قانونی کارروائی کی جائےگی ۔

واضح رہےکہ ٹی ایل پی نے فرانس میں شائع ہونے والے گستاخانہ خاکوں پر رواں سال فروری میں فرانس کے سفیر کو ملک بدر کرنے اور فرانسیسی اشیا کی درآمد پر پابندی عائد کرنے کے مطالبے کے ساتھ ملک گیراحتجاج کیا تھا۔

حکومت نے 16 نومبر کو ٹی ایل پی کے ساتھ ایک سمجھوتہ کیاکہ اس معاملے کا فیصلہ کرنے کے لیے پارلیمان کو شامل کیا جائے گا اور جب 16 فروری کی ڈیڈ لائن آئی تو حکومت نے سمجھوتے پر عملدرآمد کے لیے مزید وقت مانگا۔

جس پر ٹی ایل پی نے مزید ڈھائی ماہ یعنی 20 اپریل تک اپنے احتجاج کو مؤخر کرنے پر رضامندی کا اظہار کیا تھا۔

اس حوالے سے گزشتہ ہفتے کے اختتام پر اتوار کے روز سعد رضوی نے ایک ویڈیو پیغام میں ٹی ایل پی کارکنان کو کہا تھا کہ اگر حکومت ڈیڈ لائن تک مطالبات پورے کرنے میں ناکام رہتی ہے تو احتجاج کے لیے تیار رہیں، جس پرحکومت نے انہیں گزشتہ روز گرفتار کرلیااوراس کےبعدملک گیرہنگامےپھوٹ پڑے۔

یہ بھی چیک کریں

FATF Paris meeting

ایف اےٹی ایف اجلاس : پاکستان کیلئےاچھی خبرنہیں

ویب ڈیسک ۔۔ عالمی سطح پرمنی لانڈرنگ اوردہشت گردی کی مالی معاونت کی روک تھام …