Home / بھارتی مسلمانوں کےگھرمسمار

بھارتی مسلمانوں کےگھرمسمار

Muslim houses being demolished in India

ویب ڈیسک ۔۔ بھارتیہ جنتہ پارٹی یعنی بی جےپی کےرہنماءوں کی جانب سے پیغمبراسلام ﷺ کی شان اقدس میں گستاخانہ بیانات کےخلاف بھارت بھرمیں مسلمان سراپااحتجاج ہیں لیکن مودی سرکارکی ڈھٹائی اوربےشرمی کاعالم یہ ہےکہ اپنےگستاخ اوربدزبان رہنماءوں کولگام دینےکی بجائےالٹامسلمانوں پرعرصہ حیات تنگ کردیاہے۔

رسول کریم ﷺ کی شان میں گستاخی کرنےوالےبی جےپی رہنماءوں کےخلاف احتجاج کرنےوالےمسلمانوں کوسبق سکھانےکیلئےمودی سرکارنےنمایاں مسلمان رہنماءوں کےگھرگراناشروع کردئیےہیں۔ الہ آبادکےرہنےوالےویلفیئر پارٹی آف انڈیا کے کارکن جاوید محمد کے گھر کو غیر قانونی قرار دیتے ہوئے مسمارکردیاگیا۔

بزرگ سیاسی رہنمااورشوگرکےمریض جاویدمحمدپرالزام ہےکہ انہوں نےمسلمانوں کواحتجاج کیلئےاکسایا۔

جاوید محمد کی چھوٹی بیٹی سومیا فاطمہ نےبتایا کہ ہمارے خاندان کو ان کے گھر کے مبینہ غیر قانونی ہونے کے بارے میں کوئی نوٹس نہیں دیا گیا، جاوید محمد کے وکیل نے بھی گھر کے انہدام کی قانونی حیثیت پر بھی سوال اٹھایا اور دعویٰ کیا کہ یہ گھر ان کی اہلیہ کی ملکیت ہے لیکن انتظامیہ کی جانب سے جاری حکم نامے میں ان کی اہلیہ کا نام تک نہیں لیا گیا۔

اترپردیش کےانتہاپسند وزیر اعلیٰ یوگی آدتیا ناتھ نے کہا تھا کہ امن و امان کی صورتحال کو خراب کرنے کی کوشش کرنے والے سماج دشمن عناصر کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔

یوگی آدتیاناتھ کےبارےمیں سب کوپتاہوناچاہیےکہ وہ مسلمانوں سےنفرت کیلئےجانےجاتےہیں اوراکثرمسلمانوں کواشتعال دلانےوالےبیانات دیتےرہتےہیں۔

یہ بھی چیک کریں

Tata Sons ex chairman dies in road accident

معروف بھارتی بزنس مین حادثےمیں ہلاک

ویب ڈیسک ۔۔ بھارت کےبڑےکاروباری خاندان کےچشم وچراغ اورملک کی معروف کمپنی ٹاٹا سنزکے سابق …