مصدقہ کیسز
() 0
اموات
() 0
صحتیاب مریض
0
فعال کیسز
0
Last updated: اکتوبر 5, 2022 - 9:01 شام (+05:00) دوسرے ممالک
Home / سونےکیلئےسب سےبہترین پوزیشن

سونےکیلئےسب سےبہترین پوزیشن

what's better sleeping position?

طبی ماہرین کامانناہےکہ سونے کے لیے آپ جو پوزیشن اختیار کرتے ہیں وہ کی نیند کےمعیارکومتاثر کرتی ہے۔ یعنی اچھی پوزیشن لیکرلیٹیں گےتونینداچھی آئےگی ، سونےکیلئےپوزیشن اچھی نہیں ہوگی تونیندبھی بری ہی آئےگی ۔ چلئےاس حوالےسےامریکامیں ہونےوالی ایک تحقیق سےرہنمالینےکی کوشش کرتےہیں ۔

سونےکیلئےبہترین پوزیشن
سونے کی بہترین پوزیشن وہ ہے جس میں آپ گہری نیندلیتےاوراچھی طرح سوتے ہیں۔ تاہم یادرکھیں کہ "ایک سائزسب پرفٹ” کا طریقہ نیند کے لیے بہترین پوزیشن کا تعین کرنے میں کام نہیں کرتا۔ یعنی ضروری نہیں کہ میری اورآپ کی سونےکیلئےبہترین پوزیشن ایک جیسی ہو۔

نیند کی مصنوعات کا جائزہ لینے والی سائٹ، سلیپ لائن کے شریک بانی، رابرٹ پگانو کہتے ہیں کچھ ایسی پوزیشنیں ہیں جو عام طورپرآپ کی صحت کے لیے دوسروں کے مقابلے بہترسمجھی جاتی ہیں۔ پگانوکےمطابق کمرکےبل لیٹنااوراپنے بازوؤں کودھڑ کے ساتھ رکھ کر سوناایک بہتر آپشن ہے۔

نیپ لیب ڈاٹ کام کےنامی اورچیف ایڈیٹرڈیرک ہیلزاس بات سےاتفاق کرتےہیں کہ نیندکیلئےبہترین پوزیشن پیٹھ کےبل لیٹناہے۔ پیٹھ کےبل سونےسےآپ کی ریڑھ کی ہڈی درست حالت میں رہتی ہے۔ سونےکیلئےبہترپوزیشن نہ ہونےسےدرداورتکلیفیں آپ کی گردن ، جسم کےنچلےحصلےاورکندھوں پرپریشرپوائنٹ بناتےہیں۔

ہیلزایک ایڈجسٹ ایبل بیڈ فاؤنڈیشن کی تجویزپیش کرتےہیں جوگدے کےسراورپاؤں کواٹھائے،ریڑھ کی ہڈی،کمرکےنچلےحصےاورگردن پردباؤ کو کم کرے۔ کچھ لوگوں کے لیےایڈجسٹ ایبل بیڈ فاؤنڈیشن بیک سلیپربننےمیں مدددےگی۔

سلیپ لائن کےشریک بانی رابرٹ پگانواس بات سےاتفاق کرتےہیں کہ پیٹھ کےبل سوناایک ایسی پوزیشن ہے جوآپ کےسر،گردن اورریڑھ کی ہڈی کو سیدھارکھنےاورانہیں آرام مہیاکرنےمیں مدددیتی ہےاورجسم کےمذکورہ حصوں میں درد کا سامنا کرنے کے امکانات کو کم کرتی ہے۔

اگرآپ بیک پرسونے کے عادی نہیں توکیا آپ خود کو اس طرح سونے کی تربیت دے سکتے ہیں؟پگانوکےمطابق، آپ اپنی پیٹھ کے بل سونے کی منتقلی کو آسان بنانے کے لیے کچھ چیزیں کرسکتےہیں۔

پگانوکہتےہیں آپ اپنی پیٹھ پر مختصر وقت کے لیے لیٹنا شروع کریں۔اپنے سر اور گردن کو سہارا دینے کے لیے جسمانی تکیہ یا بڑا مستطیل تکیہ استعمال کرنے کی کوشش کریں، اور جب آپ اپنی پیٹھ کے بل سونے کی کوشش کر رہے ہوں تو اپنے پیٹ پر ایک یا دو بھاری کتاب رکھیں۔

اپنی پیٹھ کے بل سونے سےجھریوں کی اضافی تشکیل سے بچنے میں مدد مل سکتی ہے۔ جب چہرے کی جلد کو تکیے سے دبایا جاتا ہے، تو جلد کی فالٹ لائنزکے ساتھ جھریاں بن جاتی ہیں۔ تاہم اگرکسی وجہ سےآپ پیٹھ کےبل نہیں سوسکتےتودوسری بہترین پوزیشن سائیڈسلیپنگ ہے۔

سائیڈسلیپنگ
بیٹرسلیپ کونسل کےمطابق دنیابھرمیں زیادہ ترلوگ ایک سائیڈپرسوتےہیں ۔ سائیڈسلیپرزکیلئےبہترین یہ ہےکہ وہ گردن،ریڑھ کی ہڈی اورپیٹھ کےنچلےحصےکومسلسل ایک لائن میں رکھیں۔ ایساکرنےکیلئےآپ کو اکثر زیادہ معاون، درمیانی اونچائی کے تکیے کی ضرورت ہوتی ہے۔ فلفی یا ضرورت سے زیادہ نرم تکیے اکثرمدد فراہم کرنے میں ناکام رہتے ہیں جس کے نتیجے میں ریڑھ کی ہڈی کی الائنمنٹ خراب ہوتی ہے۔

پگانوتجویزکرتےہیں کہ جب آپ سوتے ہوں تو اپنے گھٹنوں کے درمیان تکیہ رکھیں تاکہ ریڑھ کی ہڈی کو درست طریقے سے سیدھ میں رکھا جاسکے۔ سلیپ فاؤنڈیشن کے مطابق، سونے کی یہ پوزیشن، جب گھٹنوں کے درمیان تکیے کے ساتھ جوڑا جائے تو کمر کے نچلے حصے کے درد کو کم کرنے میں مدددےسکتی ہے۔

امریکی طبی ماہرین کاکہناہےکہ بائیں جانب سونازیادہ بہترہےکیونکہ دائیں طرف سونےسےاندرونی اعضاپردباؤ پڑتا ہے اور ایسڈ ریفلکس سے نیند میں رکاوٹیں بڑھ سکتی ہیں، اس لیے بائیں جانب سونا خاص طور پر ایسڈ ریفلوکس یا گیسٹرو ایسوفیجیل ریفلوکس (جی ای آرڈی) بیماری والے لوگوں کے لیے اہم ہے۔ لیکن، دل کی بیماریوں میں مبتلا افراد کو اپنے بائیں جانب تکلیف کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے اور اس کے بجائے وہ اپنی دائیں طرف سونے کو ترجیح دیتے ہیں۔ اگر آپ کو دل کی بیماری ہے، تو بہتر ہے کہ آپ اپنے ڈاکٹر سے رجوع کریں، جو آپ کو سونے کی بہترین پوزیشن کے بارے میں مخصوص مشورہ دے سکتا ہے۔

سلیپ فاؤنڈیشن کے مطابق حاملہ خواتین کے لیے ایک طرف سونا بہترین ہے، کیونکہ اس پوزیشن میں دل زیادہ آسانی سے جسم کے ذریعے خون پمپ کر سکتا ہے۔ یہ جنین کو اس رگ پر بہت زیادہ دباؤ ڈالنے سے بھی روکتا ہے جو ماں کی ٹانگوں سے خون واپس اس کے دل تک لے جاتی ہے۔

پیٹ کےبل سونا
آپ کے پیٹ پر سونے کو بعض اوقات "فری فال” نیند بھی کہا جاتا ہے، اورسونےکی یہ حالت کچھ زیادہ بہترنہیں۔

ہیلز کا کہنا ہے کہ پیٹ کےبل سونےکی پوزیشن سب سے بری ہے کیونکہ اس طرح ریڑھ کی ہڈی کو درست سیدھ میں رکھنا سب سے مشکل ہے۔
آپ جس پوزیشن میں بھی سوتے ہیں،اس میں کلیدی عنصر آرام دہ ہونا ہے۔ گہری نیند میں جانے کے لیے، صحت، چوٹیں اور گدے/تکیے کے امتزاج جیسےعناصرکو مدنظر رکھنا چاہیے

About Zaheer Ahmad

Muhammad Zaheer Ahmad is a senior journalist with a career spanning over 20 years in print and electronic media. He started from the Urdu language Daily Din, proceeding to Daily Times, where he stayed as sub-editor for 2 years. In 2008, he joined broadcast journalism as a Producer at the English language Express 24/7, and later to its major subsidiary, Express-News. Zaheer currently works there as a Senior News Producer. He is also the Managing Editor of newsmakers.com.pk. Zaheer can be reached at [email protected]

یہ بھی چیک کریں

SC throws Hamza Shehbaz

دوسروالاانصاف ۔۔

بہت زیادہ غیرجانبدارہوکربھی سوچتاہوں توسمجھ نہیں آتاکہ وہ کون ساغصہ ،بغض یاعنادہےجوادارےمسلم لیگ ن اوراس …