Home / پی ٹی آئی امریکاکےسینئرعہدیدارکےہوشرباانکشافات

پی ٹی آئی امریکاکےسینئرعہدیدارکےہوشرباانکشافات

PTI US office holder Mehboob Aslam

مانیٹرنگ ڈیسک ۔۔ تحریک انصاف امریکاسےتعلق رکھنےوالےایک سابق سینئرعہدیدارمحبوب اسلم کےتحریک انصاف اورعمران خان سےمتعلق ہوشرباانکشافات ۔ کہتےہیں ایک مرتبہ فنڈزکےآڈٹ سےمتعلق سوال پوچھنےپرعمران خان نےان کاگریبان پکڑلیا۔

محبوب اسلم نےسماٹی وی پراینکرمنصورعلی خان کےپروگرام میں بات کرتےہوئےکہاکہ وہ امریکامیں پی ٹی آئی کےبانی ارکان میں شامل ہیں ،جنہوں نےامریکامیں تحریک انصاف کی ممبرسازی کی مہم میں حصہ لیا۔ محبوب اسلم نےبتایاکہ انہوں نےامریکامیں رہنےوالےپاکستانیوں کویہ کہہ کرپی ٹی آئی میں شامل ہونےپرقائل کیاکہ عمران خان اللہ کانام لیکرسیاست کرتاہے،ہمیں اس کوسپورٹ کرناچاہیےکیونکہ وہ کسی کےآگےنہیں جھکےگا۔

محبوب اسلم کےمطابق ممبرسازی کےساتھ فنڈریزنگ بھی منسلک ہوتی تھی جوکم ازکم 10ڈالرماہانہ تھی۔ جوپہلی بارممبربنتاتھااسے120ڈالردیناہوتےتھے۔ فنڈریزنگ سےجوبھی پیسہ جمع ہوتاتھاوہ امریکامیں پی ٹی آئی کےاکاونٹ میں چلاجاتاتھا۔

انہوں نےبتایاکہ 2013کےالیکشن سےپہلےامریکاسےساڑھے3ملین ڈالرجمع ہوئےتھے۔

عمران خان سےاپنےاختلافات کےحوالےسےبات کرتےمحبوب اسلم نےانکشاف کرتےہوئےکہاکہ 2013کےالیکشن کیلئےہم عمران خان کی سیاسی مہم چلانےکیلئےامریکاسےفنڈزلیکرپاکستان آئےاورہم نےاپنی ذاتی جیب سےپارٹی کوفنڈزدئیے۔

محبوب اسلم کےمطابق لاہورمیں ان کی ملاقات حفیظ اللہ نیازی اوراکبرایس بابرسےہوئی۔ انہوں نےپارٹی فنڈزمیں خوردبردکی نشاندہی کی اورمیرےسامنےکچھ ثبوت بھی رکھےکہ پارٹی کےمعمولی ملازمین کےاکاونٹ میں لاکھوں روپےجمع ہوتےہیں جوبعدمیں خوردبردہوجاتےہیں۔ اس طرح کےایک نہیں درجنوں اکاونٹس ہیں۔ پارٹی فنڈزان نجی اکاونٹ میں آتےہیں اوریہاں سےغائب کردئیےجاتےہیں۔

محبوب اسلم کےمطابق انہوں نےاس حوالےسےعمران خان سےبات کی توانہوں نےاس موضوع پربات کاجواب تک دینابندکردیا۔

فروری 2014میں میری عمران خان سےلاہورمیں ملاقات ہوئی جس میں میں نےایک بارپھرپارٹی فنڈزکی شفافیت پرسوال اٹھاتوانہوں نےکہاکہ میں فنڈزکاآڈٹ کروارہاہوں ۔ وہ آڈٹ جوانہوں نےکروایااس کی تفصیلات اکبرایس بابرپہلےہی مجھ سےشئیرکرچکےتھے۔

محبوب اسلم کےمطابق لاہورمیں جوفرم پارٹی فنڈزکی آڈٹ کی ذمہ دارتھی میں اس فرم کےآڈیٹرسےملاتوانہوں نےمیرےسامنےشکایات کاپلندہ رکھ دیااورکہاکہ ہمارےسامنےفنڈزکےاخراجات کی تفصیلات نہیں رکھی جاتیں کہ آنےوالاپیسہ کہاں کہاں خرچ ہوا؟

پھرمیں نےعمران خان کےسامنےیہ سب باتیں رکھیں اورانہیں بتایاکہ آپ جس آڈٹ کی باہرکررہےہیں وہ جھرلوآڈٹ ہے۔ میری بات سن کرعمران خان اپنی کرسی سےاٹھےاورمیراگریبان پکڑلیا۔ میں بھی غصےمیں آگیااورپھرمیرےاورعمران خان کےاچھی خاصی گرمی سردی اورگالم گلوچ تک ہوئی۔

اس دن کےبعدمیں نےتحریک انصاف کوخیربادکہہ دیا۔

یہ بھی چیک کریں

Maryam Aurengzeb harassment

مریم اورنگزیب کی ہراسانی،پی ٹی آئی سپورٹرزکی مذمت

ویب ڈیسک ۔۔ لندن میں وفاقی وزیراطلاعات مریم اورنگزیب کےساتھ تحریک انصاف کےچندکارکنوں کی بدتمیزی …