News Makers

تازہ ترین

کورونا وائرس پاکستان میں مصدقہ کیسز
374173
  • اموات 7662
  • سندھ 162227
  • پنجاب 114010
  • بلوچستان 16744
  • خیبرپختونخوا 44097
  • اسلام آباد 26569
  • گلگت بلتستان 4526
  • آزاد کشمیر 6000

 

موٹروےزیادتی کیس : واقعےکی تمام تفصیلات اس ایک خبرمیں پڑھیں

موٹروےزیادتی کیس : واقعےکی تمام تفصیلات اس ایک خبرمیں پڑھیں
اپ لوڈ :- اِتوار 13 ستمبر 2020
ٹوٹل ریڈز :- 120

ویب ڈیسک ۔۔
موٹروےزیادتی کیس میں بالآخرپولیس کوبریک تھرومل ہی گیا ۔ جی ہاں وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدارکےہمراہ پریس کانفرنس سےخطاب کرتےہوئےآئی جی پنجاب نےدعویٰ کیاکہ پولیس نےگھناءونی واردات میں ملوث دونوں ملزمان کاسراغ لگالیاہے۔ 
 
 آئی جی پنجاب نےتفصیلات بتاتےہوئےکہاکہ موٹروےریپ کیس کامرکزی ملزم عابدعلی نامی شخص ہےجواشتہاری مجرم اورباقاعدہ ریکارڈیافتہ مجرم ہے.اس کی عمر27برس اوراس کاتعلق فورٹ عباس ضلع بہاولنگرسےہے۔عابدنے2013 میں اپنےعلاقےمیں دوران ڈکیتی خاتون اور اس کی بیٹی سے زیادتی کی تھی ۔ پولیس نےاسےپکڑلیالیکن بعدمیں اپنی کم عمری کافائدہ اٹھاتےہوئےاس کی متاثرہ خاندان سے صلح ہوگئی تھی لیکن جرائم سے باز نہ آنےپراسےعلاقے سے نکال دیا گیا۔
 
دوہزارتیرہ سے2017 تک عابدپر زیادتی اور ڈکیتی سمیت دیگر جرائم کے 8 پرچے کٹے اور 8 سال میں کئی مرتبہ گرفتار ہوا مگرہرباروہ  ضمانت پر رہا ہوتارہا۔ عابد آخری بار 8 اگست 2020 کو گرفتار ہوا مگر چند دنوں بعد ہی اس کی ضمانت ہوگئی۔ عابد شہریوں کی جان و مال سے کھیلتا رہا مگراسےسزانہ مل سکی۔ 
 
عابدعلی کادوسراساتھی ملزم وقار الحسن بھی ڈکیتی کی 2 وارداتوں میں ملوث نکلا اور دو ہفتے قبل ہی ضمانت پر رہا ہوا تھا۔ وقارالحسن شیخوپورہ کےعلاقےقلعہ ستارشاہ کارہائشی ہے۔
 
ملزمان کی شناخت کیسےہوئی ؟ 
اتفاق سےملزم عابدکاڈی این اےپنجاب فرانزک سائنس لیب میں پہلےسےموجودتھا ۔ جب پولیس نےمتاثرہ خاتون نےجسم سےحاصل نمونےپنجاب فرانزک سائنس لیب بھجوائےتووہ عابدکےنمونوں سےمیچ کرگئےاوریوں عابدکی شناخت ممکن ہوئی ۔
 
جہاں تک ملزم وقارالحسن کاتعلق ہےتوبقول آئی جی اسےپولیس نےعابدکےفون ریکارڈکےذریعےشناخت کیا۔ 
 
آئی جی پنجاب کی پریس کانفرنس
آئی جی پنجاب انعام غنی نے پریس کانفرنس میں  بتایا کہ راتوں رات یہ کنفرم ہوا کہ عابد علی واقعے میں ملوث ہے، عابد علی کا پہلے ڈی این اے ٹیسٹ ہوا تھا جس سے نمونے میچ کرگئے، ہم نے ملزم کی تمام تفصیلات حاصل کیں، عابد کے نام پر چار سمیں تھیں جو مختلف اوقات میں وہ بند کرچکا۔
 
آئی جی پنجاب نے بتایا کہ ایک سم جو ملزم استعمال کررہا تھا اس کے نام پر نہیں تھی، قلعہ ستارشاہ میں چھاپےکے دوران ملزم عابد اوراس کی بیوی فرار ہوگئے، دوسرے ملزم وقار کے گھر بھی چھاپہ مارا گیا لیکن وہ پہلےہی فرارہوچکا تھا۔
 
آئی جی پنجاب نے بتایا کہ  دونوں ملزمان کا ریکارڈ ہمیں مل چکا ہے ہم ان کے تعاقب میں ہیں، امید ہے بہت جلد دونوں ملزمان کو گرفتار کرلیں گے۔ 
 
واقعے کا پسِ منظر
9ستمبرکولاہور کےعلاقے گجر پورہ میں رات گئے لاہورسیالکوٹ موٹر وے پر خاتون کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنانےکا واقعہ پیش آیا۔
 
  ایف آئی آر کےمطابق گوجرانوالہ سے تعلق رکھنے والی خاتون رات کو تقریباً ڈیڑھ بجے اپنی کار میں اپنے دو بچوں کے ہمراہ لاہور سےگوجرانوالہ واپس جا رہی تھی کہ رنگ روڈ پر گجر پورہ کے نزدیک اسکی کار کا پیٹرول ختم ہو گیا۔ گاڑی روک کر خاتون شوہر کا انتظار کر رہی تھی،اس سےبھی پہلے خاتون نے اپنے ایک رشتے دار کو فون کیا، رشتے دار نے موٹر وے پولیس کو فون کرنے کا کہا۔
 
 خاتون نے موٹروے پولیس کوفون کیا مگر موٹر وے پولیس نے مبینہ طور پر کہا کہ کوئی ایمرجنسی ڈیوٹی پر نہیں ہے۔ تصویرکادوسرارخ یہ ہےکہ موٹروے ہیلپ لائن پر خاتون کو جواب ملا کہ گجر پورہ کی بِیٹ ابھی کسی کو الاٹ نہیں ہوئی۔
 
خاتون موٹروےپولیس کاجواب سننےکےبعداپنےشوہرکےانتظارمیں تھی کہ اتنی دیر میں دو مسلح افراد موٹر وے سے ملحقہ جنگل سے آئےاور کار کا شیشہ توڑ کرخاتون اور اس کے بچوں کو نزدیک جنگل میں لے گئےاورخاتون کو بچوں کے سامنے زیادتی کا نشانہ بنایا۔ اس  کےبعدوہ اس سے طلائی زیور اور نقدی چھین کر فرار ہو گئے۔
 
 گرفتاری میں مدددینےوالوں کیلئے25، 25لاکھ انعام کااعلان
دونوں ملزموں کی گرفتاری تاحال عمل میں نہیں آئی ہے،پریس کانفرنس میں وزیراعلیٰ عثمان بزدارنےاعلان کیاکہ جوبھی ان ملزموں کی گرفتاری میں مدددےگا،اسےپچیس پچیس لاکھ روپےانعام دیاجائےگااوراس کانام بھی صیغہ  رازمیں رہےگا۔ 
 
اطلاع دینےکیلئےایمرجنسی نمبرزجاری
  ملزمان کی اطلاع دینے والے کے لیے پنجاب پولیس نے فون نمبرز جاری کر دیے ہیں۔ اطلاع دینے کے لیے سی سی پی او لاہور آفس، ڈی آئی جی  انویسٹی گیشن لاہور اور  ایس ایس پی لاہور کے دفاتر کے نمبر بھی فراہم کیے گئے ہیں۔
 
ccpo lhr
office.04299203524
04299203941
mobile.03065210000
 
Dig inv lhr
office. 04299201904
04299200214
mobile.03008296333
 
Ssp inv lhr
office.04299203838
04299200190
mobile.03068419999
 

Copyright © 2018 News Makers. All rights reserved.