News Makers

تازہ ترین

کورونا وائرس پاکستان میں مصدقہ کیسز
374173
  • اموات 7662
  • سندھ 162227
  • پنجاب 114010
  • بلوچستان 16744
  • خیبرپختونخوا 44097
  • اسلام آباد 26569
  • گلگت بلتستان 4526
  • آزاد کشمیر 6000

 

کوروناوائرس:امریکی محکمہ دفاع پینٹگان کی تہلکہ خیزرپورٹ

کوروناوائرس:امریکی محکمہ دفاع پینٹگان کی تہلکہ خیزرپورٹ
اپ لوڈ :- جمعرات 09 اپریل 2020
ٹوٹل ریڈز :- 732

دوستو،آج مجھےآپ سےکوروناوائرس کےحوالےسےایک انتہائی اہم اورسنسنی خیزرپورٹ پربات کرنی ہے۔ یہ رپورٹ امریکی اخبارنیشن نےشائع کی ہےاوراس کےمطابق امریکی محکمہ دفاع کودوہزارسترہ ہی میں کوروناوائرس کےبارےمیں پتاچل گیاتھااوراس نےاس مہلک وائرس کےنتیجےمیں آنےوالی تباہی کی بروقت پیشنگوئی کردی تھی ۔۔ 
 
خبرکےمطابق : 
 
امریکی محکمہ دفاع پینٹاگان نہ صرف اس مصیبت سےآگاہ تھا بلکہ اس نےکوروناوائرس کےحملےکےدوران ملک میں وینٹی لیٹرز، فیس ماسک اورہسپتالوں میں بیڈزکی شدیدکمی تک کی پیشنگوئی کردی تھی ۔ دوستوآپ یہ سب جان کرحیران ہونگےلیکن آپ اس وقت اوربھی زیادہ حیران ہونگےجب آپ کو یہ پتاچلےگاکہ پینٹاگان نےدوہزارسترہ ہی میں اس مہلک وباکےبارےمیں خبردارکردیاتھا۔
 
پینٹاگان پلان دوہزارسترہ کےعنوان سےاس رپورٹ صاف صاف لفظوں میں یہ بتادیاگیاتھاکہ آنےوالی وباانسان کےنظام تنفس پرحملہ آورہوگی۔ کووڈنائنٹین  نامی یہ بیماری نظام تنفس کی بیماری ہےاورنوول کوروناوائرس کی وجہ سےلگتی ہے۔ ناول کامطلب ۔۔ یعنی یہ انسانوں کی دنیامیں بالکل نئی ہے۔حیرت کی بات ہےکہ پینٹگان کےخط میں ایک سےزیادہ بارکوروناوائرس کاحوالہ دیاگیاہے۔ ایک جملےمیں تویہاں تک کہاگیاہےکہ کوروناوائرس انفیکشنزدنیامیں عام ہیں۔اس خبرکاایک پیراگراف ہے۔:
 
“The most likely and significant threat is a novel respiratory disease, particularly a novel influenza disease,” the military plan states. Covid-19 is a respiratory disease caused by the novel (meaning new to humans) coronavirus. The document specifically refers to coronaviruses on several occasions, in one instance saying, “Coronavirus infections [are] common around the world.”
 
ڈینس کوفمین جوامریکاکی ڈیفنس انٹیلی جنس ایجنسی میں اعلی عہدےپرکام کرچکےہیں اس بات کی گواہی دیتےہیں کہ امریکی انٹیلی جنس بہت پہلےسےکوروناوائرس کےخطرےسےآگاہ تھی ۔ کوفمین دسمبردوہزارسترہ میں فوج سےریٹائرہوگئے۔ ایک حالیہ انٹرویومیں کوفمین نےکہاکہ انٹیلی جنس اداروں نےپہلےہی خبردارکردیاتھاکہ کوروناوائرس پانچ سال تک انسانوں کوتنگ کرےگا۔ انہوں نےکوروناوائرس کےحوالےسےانٹیلی جنس فیلیرزکی باتوں کوسختی سےردکردیا۔ 
Denis Kaufman, who served as head of the Infectious Diseases and Countermeasures Division at the Defense Intelligence Agency from 2014 to 2017, stressed that US intelligence had been well aware of the dangers of coronaviruses for years. (He retired from his decades-long career in the military in December 2017.)
وہ کہتےہیں ۔۔۔
 
“The intelligence community has warned about the threat from highly pathogenic influenza viruses for two decades, at least. They have warned about coronaviruses for at least five years,” Kaufman said in an interview.
 
کوفمین کےمطابق انٹیلی جنس فیلیرزکی بات کرنادراصل ان لوگوں کوکلین چٹ دیناہےجنہوں نےایک انتہائی اہم انٹیلی جنس وارننگ کونظراندازکردیا۔ 
 
پینٹاگان اپنےپلان میں مزیدلکھتاہے: 
 
 “Competition for, and scarcity of resources will include…non-pharmaceutical MCM [medical countermeasures] (e.g., ventilators, devices, personal protective equipment such as face masks and gloves), medical equipment, and logistical support. This will have a significant impact on the availability of the global workforce.”
 
پینٹگان نےجس جس بات سےخبردارکیاتھابالکل ویساہی ہورہاہے۔ اس وقت امریکاجیسےملک میں نوبت یہاں تک آپہنچی ہےکہ وینٹی لیٹرز،پرسنل پروٹیکٹواکیوپمنٹ جیسےکہ گلوز،فیس ماسک اورحفاظتی گائون پورےکرنامشکل ہورہاہے۔  امریکی سرکاری ادارہ دی یوایس نیشنل سٹاک پائلزکےپاس یہ اشیاتقریباً ختم ہوچکی ہیں ۔  پینٹاگان نےاسپتالوں میں بیڈزکی شدیدکمی کی جوبات کی تھی وہ بھی درست ثابت ہورہی ہے،اٹلی میں کوروناکےمریضوں کیلئےبیڈزکم پڑگئےاورامریکامیں بھی کورونامریضوں کوڈیل کرنےکیلئےہسپتالوں کی کپیسیٹی کم پڑتی جارہی ہے۔ 
 
 رپورٹ کےمطابق :
 
 “Even the most industrialized countries will have insufficient hospital beds, specialized equipment such as mechanical ventilators, and pharmaceuticals readily available to adequately treat their populations during clinically severe pandemic۔” 
 
خبرکےمطابق پینٹاگان نےرابطہ کرنےپراپنےاس پلان پرکسی قسم کےردعمل کااظہارنہیں کیا۔ 
تودوستو ،، دیکھاآپ نےکہ امریکی محکمہ دفاع کودوہزارسترہ میں ہی اس وائرس کےبارےمیں پتاتھااوراس نےپرایک جامع رپورٹ بھی تیارکی اورظاہرہےوہ رپورٹ اس نےفائلوں میں بندکرنےکیلئےتونہیں بنائی ہوگی، ہم مان سکتےہیں کہ اس وقت کی اعلیٰ امریکی انتظامیہ جسےہم ٹرمپ انتظامیہ ہی کہیں گے،اس سےآگاہ تھی ۔ لیکن یہاں کچھ سوال ہیں جوپوچھےجانےچاہئیں ۔ 
نمبرایک : امریکی انتظامیہ پینٹاگان کی اس رپورٹ سےآگاہ تھی تواسےسنجیدگی سےکیوں نہیں لیاگیا؟
نمبردو،رپورٹ درست ہےتوکیاامریکامیں ہزاروں بےگناہوں کی موت کاذمہ دارکسےٹھہرایاجائےگا؟
نمبرتین: پینٹاگان کےمطابق یہ وائرس انسانوں کیلئےبالکل نیاہوگاتواسےاس بارےمیں کیسےپتاچلا؟
نمبرچار:پینٹاگان اپنی خفیہ تحقیقات سےحکام کوآگاہ کرےتواس وائرس کوقابوکرنےمیں اچھی خاصی مددملک سکتی ہے؟
نمبرپانچ : یہ وائرس قدرتی ہےیااسےکسی لیبارٹری میں بنایاگیاہے؟ 
دوستویہ تھی وہ اہم ترین رپورٹ اوراس میں کئےگئےسنسنی خیزانکشافات اوراس پرہمارےسوالات۔ اب دیکھناہوگاکہ کیاامریکامیں اس حوالےسےکوئی کمیشن بنےگایااسےبھی عراق پر حملےکیلئےبڑےپیمانےپرتباہی پھیلانےوالےہتھیاروں کےجھوٹےالزامات کی طرح سردخانےمیں ڈال دیاجائےگا؟ 
 

Copyright © 2018 News Makers. All rights reserved.