News Makers

تازہ ترین

کورونا وائرس پاکستان میں مصدقہ کیسز
274289
  • اموات 5842
  • سندھ 118311
  • پنجاب 92073
  • بلوچستان 11601
  • خیبرپختونخوا 33397
  • اسلام آباد 14884
  • گلگت بلتستان 1989
  • آزاد کشمیر 2034

 

کوروناوائرس کن لوگوں کوکچھ نہیں کہتا: نئی تحقیق

کوروناوائرس کن لوگوں کوکچھ نہیں کہتا: نئی تحقیق
اپ لوڈ :- جمعرات 02 جولائی 2020
ٹوٹل ریڈز :- 87

ویب ڈیسک ۔۔
 
کوروناوائرس کومکمل طورپرجاننے،اس مہلک اورجان لیوابیماری کی روک تھام کیلئےجہاں دنیابھرکےماہرین سرجوڑکربیٹھےہیں وہیں سویڈون میں کوروناوائرس کولیکرایک نئی تحقیق سامنےآئی ہے۔ اس تحقیق میں شامل ماہرین نےدعویٰ کیاہےکہ جسم میں امیونٹی یعنی قوت مدافعت مضبوط کرلینے والےافراد کورونا کا شکار نہیں ہو سکتےاوراس وجہ سے انہیں اینٹی باڈیز ٹیسٹ کی بھی ضرورت پیش نہیں آتی۔
 
جیونیوزکےمطابق کیرولنسکا یونیورسٹی اسپتال سوئیڈن کے محققین نےایسے200 افراد پر تحقیق کی جن میں کورونا وائرس کی علامات کم تھیں یا سرےسےتھیں ہی نہیں۔ تحقیق سے معلوم ہوا کہ جن افراد میں کورونا وائرس کی علامات کم یا پھر ہوتی ہی نہیں ان میں ٹی سیلزپائے جاتے ہیں جو کسی بھی انفیکشن سے لڑتے ہیں۔
 
ٹی سیلزکیاہیں؟ ٹی سیلزدراصل انسانی جسم میں ایک قسم کے سفید خون کے خلیات ہیں جو وائرس سے متاثرہ خلیوں کو پہچاننے کی صلاحیت رکھتے ہیں اور یہ قوت مدافعت کے نظام کا ایک لازمی حصہ ہوتا ہے۔ 
 
ماہرین کے مطابق خون کا عطیہ کرنے والے صحتمند افراد میں سے 30 فیصد میں “ٹی سیل امیونٹی” اینٹی باڈیز سے دو گنا زیادہ ہوجاتی ہیں۔ یعنی ایسے مریض جن میں کورونا وائرس کی علامات کم ہیں یا نہیں ہیں ان میں اگراینٹی باڈیزکم ہےاس کےباوجود بھی ٹی سیلز وائرس سے مقابلہ کرسکتے ہیں۔  
 

Copyright © 2018 News Makers. All rights reserved.