News Makers

تازہ ترین

میرےپاس تم ہو: ڈرامہ ڈائیلاگز پرعدنان صدیقی بھی بول پڑے

میرےپاس تم ہو: ڈرامہ ڈائیلاگز پرعدنان صدیقی بھی بول پڑے
اپ لوڈ :- ہفتہ 01 فروری 2020
ٹوٹل ریڈز :- 127

ویب ڈیسک ۔۔
 
اےآروائی ڈیجیٹل کابلاک بسٹرڈرامہ 'میرے پاس تم ہو' نےمداحوں کی بےپناہ تعریفیں سمیٹنےکےساتھ ساتھ بےانتہاتنقیدبھی برداشت کی ۔ اس ڈرامےپرتنقیدکرنےکی وجہ اس ڈرامےمیں خواتین کومنفی کردارکےطورپرپیش کرناتھا ۔
 
خواتین ہی کےحوالےسےاس ڈرامے کے ڈائیلاگز بھی متنازع رہےاورتواورمداحوں کی بڑی تعدادنےآخری قسط کو بھی دل سےپسند نہیں کیا۔
 
 'میرے پاس تم ہو' ڈرامے میں ہمایوں سعید، عائزہ خان، عدنان صدیقی اور حرا مانی نے اہم کردار نبھائے۔
 
معروف اداکار عدنان صدیقی نےاس ڈرامےمیں 'شہوار' نامی بزنس مین کا منفی کردار نبھایا اور آخری قسط میں اپناگھرچھوڑکرجاتےہوئےان کےاوران کی بیوی کےدرمیان کچھ اس قسم کی جملےبازی ہوئی ۔: 'ایسی عورت کو مرد برباد نہیں کرتا، اس کے اندر موجود اپنے گھر توڑ دینے کی ہمت اسے برباد کرتی ہے، اس کے آنکھوں سے بڑے اس کے خواب اسے برباد کرتے ہیں، ایسی عورتیں یہ نہیں دیکھتی کے انہیں کیا ملا ہے، وہ یہ دیکھتی ہیں کہ دوسروں کو کیا ملا ہے، اندھی ہوتی ہیں ایسی عورتیں اور اندھوں کو پار لگانے کے بہانے کوئی بھی ساتھ لے جائے، اس کے
لیے کسی کا شہوار احمد ہونا ضروری نہیں'۔
 
اپنے سوشل میڈیا اکاؤنٹ پر ایک پوسٹ میں عدنان صدیقی نےخود اس بات کا اعتراف کیا کہ 'میرے پاس تم ہو' کے ڈائیلاگز تکلیف دہ تھے۔
 
انسٹاگرام پرپوسٹ میں عدنان صدیقی کا کہنا تھا کہ 'مجھے جو پیار ملا اس کے لیے میں سب کا شکریہ ادا کرنا چاہتا ہوں، میں جانتا ہوں کہ ڈرامے کے ڈائیلاگز تکلیف دہ تھے اور کچھ مواقع پر تھوڑا زیادہ متنازع بھی ہوگئے، کبھی تو خواتین کو ایک ہی انداز میں پیش بھی کیا گیا، میں یہ سب مانتا ہوں اس لیے بتانا ضروری سمجھتا ہوں، امید تھی کہ کہانی ڈرامے کو مزید بہتر بناتی'۔
 
 
 
 
 

Copyright © 2018 News Makers. All rights reserved.