News Makers

عسکری قیادت :-ملکی سیاسی معاملات سےکوئی لینادینانہیں ، عسکری قیادت
عسکری قیادت :-عسکری قیادت نےہمیشہ خودکوسیاسی معاملات سےدوررکھنےپرزوردیا
عسکری قیادت :-الیکشن ریفارمز ، نیب و سیاسی معاملات سےکوئی لینادینانہیں ، عسکری قیادت
عسکری قیادت :-گزشتہ روزشیخ رشیدنےپارلیمانی لیڈرزکی عسکری قیادت سےملاقات کی تصدیق کی تھی
عسکری قیادت :-الیکشن ریفارمز، نیب و سیاسی معاملات سےمتعلق تمام کام سیاسی قیادت نےکرنےہیں،عسکری قیادت

تازہ ترین

کورونا وائرس پاکستان میں مصدقہ کیسز
303089
  • اموات 6393
  • سندھ 132591
  • پنجاب 97946
  • بلوچستان 13690
  • خیبرپختونخوا 37140
  • اسلام آباد 15984
  • گلگت بلتستان 3297
  • آزاد کشمیر 2441

 

آنےوالےدنوں میں گیس کی شدیدقلت کاسامناہوگا،وفاقی حکومت

آنےوالےدنوں میں گیس کی شدیدقلت کاسامناہوگا،وفاقی حکومت
اپ لوڈ :- بدھ 09 ستمبر 2020
ٹوٹل ریڈز :- 13

 ویب ڈیسک ۔۔
 
وفاقی حکومت نےخبردارکیاہےکہ آنےوالےدنوں میں ملک بھرکےگھریلواورصنعتی صارفین کوگیس کی شدیدقلت کاسامناہوگا۔
 وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے پیٹرولیم ندیم بابر نے وفاقی وزیر توانائی عمر ایوب کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ بڑےپیمانےپرگیس لوڈشیڈنگ کےامکان کوسامنےرکھتےہوئےوفاق سمیت تمام اسٹیک ہولڈرزکوسپلائی بڑھانے کےقابل عمل طریقہ کارپرعمل کرناہوگا۔
 
ان کا کہنا تھا کہ طلب میں اضافہ اور مقامی گیس کی پیداوار کو دیکھتے ہوئے گیس پیدا کرنے والے صوبوں میں بھی اس کا استعمال کیا جائے تو سندھ کو ڈیڑھ سال میں گیس کی کمی کا سامنا کرنا پڑے گا، اس کے بعد خیبر پختونخوا کو ڈھائی سال میں اور بلوچستان کو تقریباً ساڑھے تین سالوں میں گیس کی قلت کا سامنا ہوگا۔
 
ندیم بابرنےکہاکہ سوئی سدرن گیس کمپنی لمیٹڈ (ایس ایس جی سی ایل) کو صرف 22-2021 کے موسم سرما میں تقریبا 450 ایم ایم سی ایف ڈی (ملین مکعب فٹ فی یوم) گیس کی قلت کا سامنا کرنا پڑے گا جو اس وقت صوبہ سندھ کی صنعت کو گیس کی کل فراہمی کے برابر ہے۔
 
ان کا کہنا تھا کہ 'اس کا مطلب یہ ہوگا کہ یا تو صنعت کو یا رہائشی سیکٹر کو گیس کی فراہمی روکنے کی ضرورت ہوگی'۔
 
انہوں نے کہا کہ گزشتہ سردیوں میں سندھ سے تقریبا 260 ایم ایم سی ایف ڈی گیس پنجاب کو برآمد کی گئی تھی جبکہ کے الیکٹرک کو تقریبا 60 ایم ایم سی ایف ڈی، ایل این جی فراہم کی گئی تھی، آنے والے موسم سرما میں سندھ میں گیس کی طلب میں 100 ایم ایم سی ایف ڈی کا اضافہ ہونا ہے۔
 
عمر ایوب کا کہنا تھا کہ ملک میں گیس کی طلب ساڑھے 6 سے 7 ارب ایم ایم سی ایف ڈی اور پیداوار 3.5 ارب ایم ایم سی ایف ڈی ہے اور گیس کے موجودہ ذخائر 7.5 فیصد کی شرح سے کم ہو رہے ہیں۔
 

ٹیگز

Copyright © 2018 News Makers. All rights reserved.