News Makers

تازہ ترین

کورونا وائرس پاکستان میں مصدقہ کیسز
64028
  • اموات 1317
  • سندھ 25309
  • پنجاب 22964
  • بلوچستان 3928
  • خیبرپختونخوا 8842
  • اسلام آباد 2100
  • گلگت بلتستان 658
  • آزاد کشمیر 227

 

نواز بھگائو ، معیشت بچاو ۔۔ نامی عمرانی تجربہ بری طرح ناکام ہوگیا

نواز بھگائو ، معیشت بچاو ۔۔ نامی عمرانی تجربہ بری طرح ناکام ہوگیا
اپ لوڈ :- منگل 16 فروری 2020 اپ ڈیٹ :- منگل 18 فروری 2020
ٹوٹل ریڈز :- 276

خاکم بدہن ۔۔ وطن عزیزاس وقت جن حالات سےگزررہاہےکہیں وہ دن نہ آجائیں کہ گھرمیں بھولےسےکوئی بلب جلائےاورپورےگھرمیں "بند کروبندکرو"کی چیخ وپکارشروع ہوجائےاورپھرجلدی سےگھرکاکوئی بڑاسوئچ آف کرکےنصیحت آمیزاندازمیں چھوٹےسےکہےکہ بیٹابلب مت جلاو،نہیں توبل آجائےگا ۔
 
حالات کوجلدنہ سدھاراگیاتوخدانخواستہ نوبت یہاں تک بھی پہنچ سکتی ہےکہ دورکہیں گاوں میں کوئی بھوکابچہ روٹی کیلئےشورمچائےتوماں اسےبہلانےپھسلانےکی بجائےیہ کہےگی کہ "چپ ہوجا،نہیں توعمران خان آجائےگا" ۔ 
 
اوپربیان کی گئی دونوں مثالیں بظاہرفرضی ہیں لیکن دیکھاجائےتوحقیقت ان سےکچھ زیادہ مختلف نہیں ۔ ایک کم یادرمیانی آمدنی والاشخص بجلی اورگیس کےبھاری بھرکم بلوں کی ادائیگی کےبعد مہنیےکےباقی دن کسی کےآگےہاتھ پھیلائےبغیربچوں کوروکھی سوکھی کھلانےمیں کامیاب ہوجائےتوخداکےحضورسجدہ ریزہوکراس کاشکراداکرتاہے۔  
 
 ملک کےبہترین ماہرین معاشیات اورسیاسی حالات کاباریک بینی سےجائزہ لینےوالےجیدصحافی دونوں پاکستان کی موجودہ اقتصادی صورتحال کی جوتصویرپیش کررہےہیں اسےدیکھ کرخوف آتاہے ۔ اعدادوشمارکےمطابق اس حکومت کےآنےسےاب تک ایک مزید ایک کروڑافرادخط غربت سےنیچےگرچکےہیں جبکہ دوسال کےاندربائیس لاکھ افرادبیروزگارہونےکاخدشہ ہے۔ ستم بالائےستم رواں مالی سال کےدوران جی ڈی پی گروتھ ریٹ 2فیصدسےبھی نیچےگرجائےگا یعنی معیشت کاٹوٹل دھڑن تختہ ۔
 
  معروف سینئرصحافی جناب مرتضیٰ سولنگی  نےاپنےایک حالیہ مضمون میں ملکی معیشت پرکچھ اس قسم کےخیالات کااظہارکیاہے: 
 "اب جبکہ معیشت کی شرح نمو چھ فیصد سے گر کر دو فیصد سے بھی کم ہو گئی ہے اور تمام اشاریے یہ بتا رہے ہیں کہ اس میں مزید کمی ہوگی اور نئی سرکار جن کے قائد کی آٹھ ہزار ارب کے محصولات اکٹھا کرنے کے وعدے کی تکمیل کی بجائے اس کے آدھے جمع کرنے پر بھی جان جا رہی ہے اور ان کے لائے ہوئے شبر زیدی پتلی گلی پکڑ کر رفو چکر ہو چکے ہیں، ایک کروڑ کے قریب نئے انسان خط غربت سے نیچے گر گئے ہیں، 22 لاکھ افراد بےروزگار ہوچکے ہیں، سٹاک مارکیٹ آئے دن قطب جنوبی کی طرف گامزن ہے، زراعت اور صنعت روبہ زوال ہیں، 14 فیصد کے قریب شرح سود اور مہنگائی 20 فیصد سے زیادہ ہے، عوام آٹے، چینی اور گھی کے لیے دربدر کی ٹھوکریں کھا رہے ہیں اور لوگوں کو راشن کارڈ اور یوٹیلیٹی سٹورز کی طرف دھکیلا جا رہا ہےتوقومی سلامتی کتنی مستحکم ہوئی ہے؟"
 
یہ بھی پڑھیں ۔۔
 
 مستندعالمی اداروں کےاعدادوشمارکےمطابق رواں مالی سال میں بنگلہ دیش کاگروتھ ریٹ 7.4فیصد ، بھارت کا7فیصد،جنگ اورشورش زدہ افغانستان کا3.3فیصدجبکہ پاکستان کاگروتھ ریٹ 2.4فیصدرہےگا ۔ 
 
معروف صحافی ، تجزیہ کاراوراینکرپرسن جناب طلعت حسین اپنےآرٹیکل : عمرانی تجربےکےچندتلخ حقائق ۔۔ میں لکھتے ہیں : 
"دوہزاربیس کی صورت حال سن لیجیے۔ پاکستان کے قرضے اور مالی واجبات 41.479 کھرب روپے تک پہنچ گئے ہیں۔ یعنی ہم 2018 سے لے کر اب تک تقریباً 40 فیصد زیادہ مقروض ہو گئے ہیں اور یہ سب نئے قرضے ہیں۔ یہ پرانے قرضوں کو اتارنے کے لیے نہیں اس ملک کو چلانے کے لیے لیے گئے ہیں مگر اب کوئی بین نہیں ڈالتا۔ کوئی ملک کو بچانے والا کرائے پر حاصل کیے ہوئے معاشی تجزیہ کاروں کے جھرمٹ میں بیٹھ کر مرثیہ نہیں پڑتا۔" 
 
یہ بھی پڑھیں ۔۔
 
"گیلپ سروے کے مطابق 80 فیصد پاکستانی بزنس مین یہ سمجھتے ہیں کہ ملکی معیشت غلط سمت جا رہی ہے۔ غور کیجیے لفظ سمت ہے زاویہ نہیں، یعنی معیشت اس طرف جا رہی ہے جس طرف تباہی ہے۔ اگلے 10 سال میں بڑھتی ہوئی آبادی، محدود ہوتے وسائل موجودہ شرم ناک معاشی شرح ترقی کو پاکستان کے خلاف ہونے والی بدترین سازش میں تبدیل کر سکتے ہیں۔ اگر ابھی تدارک نہ ہوا تو تاریخ کی سفاکیوں کو کوئی نہیں روک سکے گا۔" 
 
"اعداد و شمار کچھ بھی کہیں اس امر کے ماننے کی قیمت کوئی چکانے کو تیار نہیں کہ معیشت بچاؤ، نواز بھگاؤ اور عمران کو لاؤ نامی تجربہ بری طرح ناکام ہو گیا ہے۔"
 
 (باقی اگلی قسط میں)
 

Muhammad Zaheer

The author is a journalist. He is currently working for a news channel.

Muhammad Zaheer مزید تحریریں

Muhammad Zaheer

Copyright © 2018 News Makers. All rights reserved.