Enjoy The Best News and Blogs
بہترین خبریں ، بلاگ اور تجزئیے

" - صحافت اور قوموں کا زوال ایک ساتھ ہوتا ہے"

Failure is word unknown to me ...

                        جنرل قمر باجوہ کو 3 سال کیلئے سپہ سالار برقرار رکھنے پر چین کا خیر مقدم                         جنرل قمر جاوید غیر معمولی صلاحیتیں رکھنے والے سپہ سالار ہیں، چینی وزارت خارجہ                         جنرل باجوہ نے پاک چین تعلقات کی مضبوطی میں انتہائی اہم کردار ادا کیا، چین                         جنرل قمر جاوید باجوہ چین کی حکومت اور فوج کے دیرینہ دوست ہیں، چین                         پاکستانی آرمی چیف نے پاک چین تعلقات کی مضبوطی میں انتہائی اہم کردار ادا کیا، چین                         امید ہےپاک آرمی علاقائی امن و سلامتی میں اپناکرداراداکرتی رہےگی ، چین

تازہ ترین

         

( تلاش کریں )

Shortcut( شارٹ کٹ )

ساٹھ روز بعد کیاہونےوالاہے؟

22 Jul 2019 15

 

ملک میں نیب زدہ سیاستدانوں اور بیوروکریٹس کی پکڑدھکڑ میں تیزی آگئی۔ایسے میں چیئرمین سینٹ صادق سنجرانی کے خلاف عدم اعتماد  کی لہر بھی  ہے۔دونوں معاملات میں گہرا تعلق ہے۔یہی صادق سنجرانی  پہلے آصف زرداری کے حمایت یافتہ تھے۔ابھی کل کی بات ہے جب  آصف زرداری نے رضا ربانی پر صادق سنجرانی کو فوقیت دےکر چیئرمین سینٹ کیلئے پسند کیا۔اور آج   آصف زرداری اسی صادق سنجرانی کو ہٹانے کیلئے لاکھ جتن کررہے ہیں۔ یہ سادہ سا کھیل ہے،جسے عوام بھی   سمجھنے لگے ہیں۔آصف زرداری سیاسی مفاہمت کے نام پر حکمت عملی میں  ثانی نہیں رکھتے لیکن اب وہ دور گزر چکا ۔ اور موجودہ  وقت  کے تقاضے کچھ اور ہیں۔ جیسے جیسے وقت گزرے گا سیاسی لبادے میں  ڈراونے کردار واضح ہوتےچلےجائیں گے ۔

آصف زرداری  نیب  کے شکنجے  سے بچاو کےلئے چیئرمین سینٹ کی تبدیلی سمیت کئی حربے آزما چکے ہیں ،دوسری طرف انہیں   گرفتار کر کے حقیقی معنوں میں  اپوزیشن کی طرف دھکیلا جاچکا ہے۔صادق سنجرانی کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک  سینٹ  سیکرٹریٹ میں آچکی  ہے ۔ اپوزیشن جماعتوں کے پاس اتنی واضح اکثریت ہے کہ بظاہر سنجرانی  کا جانا یقینی نظر آتا ہے لیکن یہ اتنا آسان بھی  نہیں  ہو  گا۔ وجہ اس کی یہ ہے کہ ایک تو اپوزیشن کے پاس ایسا کرنے کے لئے مضبوط اخلاقی جواز نہیں۔ جس طرح پہلے بلا جواز رضا ربانی کے بجائے آصف زرداری  نے  سنجرانی  کو چیئرمین  سینٹ بنایا تھا۔ اسی طرح اب  سنجرانی  کے خلاف اس کے سوا کوئی جواز نظر نہیں آتا کہ آصف  زرداری   کسی اور پرآنے والا   غصہ یہاں نکالنا چاہتے ہیں۔ جس طرح سنجرانی  پیپلز پارٹی کی حمایت سے چیئرمین  سینٹ  بنے  اسی طرح سلیم مانڈوی والا کے انتخاب میں بھی پی ٹی آئی اور بلوچستان  کی ایک پارٹی  کے ووٹ شامل تھے۔ سنجرانی کے خلاف عدم اعتماد لانے سے قبل ضروری تھا کہ ڈپٹی چیئرمین سینٹ مستعفی ہو جاتے لیکن  ایسا کچھ نہیں ہوا اور  اب حکومتی گروپ ڈپٹی چیئرمین  کے خلاف عدم اعتماد لے آیا ہے۔ اپوزیشن نے  حاصل بزنجو کو چیئرمین  سینٹ کے لئے امیدوار نامزد کردیا ہے لیکن یہ امر قابل ذکر ہے کہ   اگر مسلم لیگ(ن) کو کامیابی کا یقین ہوتا تو  نواز شریف کبھی  یہ منصب کسی غیر مسلم لیگی  کو نہ دیتے۔ اب معاملہ یوں  ہے کہ ایک تو عدم اعتماد کی تحریک پر رائے شماری خفیہ بیلٹ کے ذریعے ہو گی۔ دوسرا  اگر ڈپٹی چیئرمین کو ہٹا دیا جاتا ہے تو مسلم لیگ(ن) اور جے یو آئی ڈپٹی چیئرمین شپ کا مطالبہ کر سکتی ہیں جو پیپلز پارٹی مشکل سے دے گی۔ تیسرا اپوزیشن جماعتوں کے کئی ارکان چیئرمین سینیٹ کے حامی  ہیں۔

ایسے میں چیئرمین  سینٹ  صادق سنجرانی  کی  ایوان بالا میں اپوزیشن لیڈر  راجا ظفر الحق سے ملاقات ہوئی  ۔اس دوران اپوزیشن کے مشترکہ امیدوار حاصل بزنجو بھی پہنچ گئے۔ملاقات کے بعد صادق سنجرانی  سےصحافی نے پوچھ لیا  کہ کیا  اپوزیشن رہنماؤں سے تحریک عدم اعتماد واپس لینے پر کوئی بات  ہورہی ہے؟جواباً چیئرمین سینٹ  نےصحافی سے سوال کردیا   کہ کیا ہماری ویسے بات چیت نہیں ہوسکتی؟ کیا ہم ایک دوسرے سے ناراض ہیں؟باخبرحلقے چیئرمین سینٹ صادق سنجرانی سے راجا ظفرالحق کی ملاقات کو  ہواوں کے رخ میں تبدیلی کی ابتدا  قراردےرہے ہیں۔ پیپلز پارٹی کی سینیٹر شیری رحمان کا دعویٰ   ہے کہ چیئرمین سینیٹ کےخلاف تحریک عدم اعتماد  کامیاب بنائیں گے،  حکمت عملی تیار کرلی ہے ، اپوزیشن حکومت کو شکست دے گی،اپوزیشن کا نمبر گیم مکمل ہے، بیرون ملک موجود ارکان واپس بلا لئے ہیں، اب  ہارس ٹریڈنگ کےسوا  اپوزیشن کو کیسے شکست دی جاسکتی ہے؟

چیئرمین سینٹ کی تبدیلی کے لئے  پرعزم آصف زرداری کےخلاف کئی پنڈوراباکس کھلتے جارہے ہیں۔وزیراعظم کےمعاون خصوصی برائے احتساب شہزاد اکبر نےاعلان کیا ہے کہ   آصف زرداری کی 32کمپنیوں کی جائیدادیں ، اثاثہ جات ، کراچی میں اومنی گروپ کے بے نامی پلاٹس اور شیئرزمنجمد کردیئے ہیں ، منجمد کی گئی جائیداد اور اثاثہ جات کی ملکیت کے ثبوت 60روز میں نہ آئے تو ان جائیدادوں کی ضبطگی کی جائے گی ، جن کمپنیوں کی جائیدادیں منجمد  کی گئیں  ان  میں چینی، سیمنٹ اور تعمیراتی کمپنیاں شامل ہیں،  اومنی گروپ اور آصف زرداری  کے  خلاف جے آئی ٹی کی تفتیش پر جائیدادیں منجمد کی گئیں۔شہزاداکبرنےکہاہے عزیر بلوچ نے اعتراف کیا کہ اس کو آصف زرداری نے استعمال کیا ۔معاون خصوصی برائے احتساب کے مطابق  حسن نواز ، حسین  نواز، سلیمان  شہباز اور  شہباز شریف کے داماد  علی عمران اشتہاری ڈیکلیئر ہو چکے ہیں ،ان کے خلاف بھی کارروائی ہو گی، یہ واپس نہ آئے تو جائیدادیں ضبط ہو سکتی ہیں، ان افراد نے کچھ جرائم لندن کی سرزمین پر بھی کئے ہیں۔وفاقی وزیر  علی زیدی نے کہا ہے  ملک میں اربوں روپے کی بے نامی جائیدادیں اور دولت ہے جو پکڑیں گے ، عوام کو بے نامی جائیدادوں پر ہر روز آگاہ کیا جائے گا ، برطانوی اخبار نےکہاہے  زلزلہ متاثر ین کے نام جو پیسے آئے ان

 سے سابق حکمرانوں نے جائیدادیں خریدیں،حدیبیہ کا کیس بھی بےنامی ہے،بدترین کرپشن کرکے ملک کا پیسہ لوٹا گیا ، سمٹ بینک  کی کہانی کھل کا سامنے آچکی ہے ،سمٹ بینک بھی بے نامی  بینک تھا ۔ سمٹ بینک  کی تفصیلات  علی زیدی نے بتائی ہیں   کہ ایک سٹاک بروکر نےروپالی بینک خریدا اور اس کو عارف حبیب بینک میں بدل دیا، عارف حبیب  بینک اور اٹلس بینک کو انضمام کر کے سمٹ بینک بنایاگیا ، سمٹ بینک بے نامی تھا ،اس کے شیئرز منجمد کر دیئے  ہیں، دو جولائی کو ایف بی آر نے بے نامی جائیدادیں منجمد کیں ، ایک شخص نے16جائیدادیں پلی بارگین کے ذریعے نیب کے حوالے کیں ، لوگوں کو ڈرا دھمکا کر بلاول ہاوس کراچی کے ارد گردکی جائیدادیں سستی خریدی گئیں۔

mughal_khalil@ymail.com

 

 

 

 

 

 

Author: Khalil Mughal

Mr. Khalil Mughal is a senior journalist with a long career. He has served in the leading media organizations in Pakistan. Currently, he is associated with Express News.

Read More From: Khalil Mughal

تازہ ترین

زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

یوٹرن تواچھےہوتےہیں

یوٹرن تواچھےہوتےہیں اسلام علیکم دوستو۔۔  قسمت کےکھیل بھی نرالےہیں،کب کیاہوجائے،پتاہی نہیں چلتا،یوٹ
By : Muhammad Zaheer
12 Jan 2019

اگلی باری تحریک انصاف کی

دوستو،آج آپ سےایک بات شیئرکرنی ہے۔ کچھ عرصہ پہلےجب ملک میں ن لیگ کی حکومت تھی ،نیب کامولابخش پیپلزپارٹی
By : Muhammad Zaheer
30 Oct 2018

عمران خان کاسب سےبڑامسئلہ کیاہے؟

مائی نیم ازریمبوریمبو،جان ریمبو،سلویسٹرسٹیلیون۔۔ دوستو،جس طرح یہ ڈائیلاگ بولنےسےمیں ریمبونہیں بن گیا،ا
By : Muhammad Zaheer
12 Jan 2019

سیاستدان اورگاوں کاچور

 پاکستان کےموجودہ سیاسی حالات پرغوروفکرکےگھوڑےدوڑاتےدوڑاتےمیں فی الحال اس نتیجےپرپہنچاہوں کہ کوئلوں کی
By : Muhammad Zaheer
19 Oct 2018