News Makers

تازہ ترین

استعفیٰ بھلے نہیں آیا لیکن مولانافضل الرحمان نےحکومتی صفوں میں کھلبلی ضرورمچادی

استعفیٰ بھلے نہیں آیا لیکن مولانافضل الرحمان نےحکومتی صفوں میں کھلبلی ضرورمچادی
اپ لوڈ :- جمعرات 07 دسمبر 2019 اپ ڈیٹ :- جمعرات 05 دسمبر 2019
ٹوٹل ریڈز :- 190

 تجزیہ ۔۔  

مولانافضل الرحمان کی جانب سےدھرنےکااعلان ہوتےہی حکومتی صفوں میں کھلبلی سی مچ گئی ہے۔ بظاہرتووزراکےبیانات سےلگتاہےکہ جیسےدھرناان کیلئےکوئی اہمیت نہیں رکھتالیکن ان کی بوکھلاہٹ اورجھاگ 

اڑاتےبیانات ظاہرکرتےہیں کہ جیسےمولاناکادھرناشروع ہونانہیں بلکہ شروع ہوچکاہے۔

  اس میں کوئی شک نہیں کہ مولانافضل الرحمان نےآزادی مارچ اوردھرنےکااعلان کرکےاپوزیشن کی دواہم جماعتوں مسلم لیگ ن اورپیپلزپارٹی کووقتی طورپرہی سہی بائونڈری کےباہرپھینک دیاہے۔ یہی وجہ ہےکہ نیوزچینلزکی ہیڈلائنوں اوروزراکی زبانوں پران دنوں صرف ایک ہی نام ہےاوروہ ہے، مولانافضل الرحمان ۔ یوں لگتاہےکہ عمران خان بھی ن لیگ اورپیپلزپارٹی کی بجائےمولاناکوہی اپنااصل حریف سمجھ بیٹھےہیں ۔

عمران خان نےاس بیان پربھی یوٹرن لےلیاتو؟

 عمران خان کو سیاسی مخالفین سےسیاسی طورپرنمٹنانہیں آرہا، اسی لئےوہ اپنےسیاسی دشمنوں کوسبق سکھانےکےغیرسیاسی اورآمرانہ طریقےاختیارکررہےہیں ۔ مولانافضل الرحمان کےخلاف بھی ممکن ہےایساہی کوئی طریقہ اختیارکیاجائےکیونکہ احتجاج کیلئےاپوزیشن کوکنٹینراورکھاناتک دینےکاکھلم کھلااعلان کرنےوالےوزیراعظم عمران خان اپنےاس وعدےکوکبھی بھی عملی جامہ پہنانےکی ہمت نہیں کرینگےاوریہاں بھی ایک اوریوٹرن لےلیں گے۔

یہاں سوال یہ پیداہوتاہےکہ آخرمولاناکوآزادی مارچ اوردھرنےسےکیسےروکاجائے؟ ممکنہ طورپرایسادوہی طریقوں سےممکن ہے۔ ایک تویہ کہ مولاناخودآزادی مارچ اوردھرنےکافیصلہ ترک کردیں اوردوسرایہ کہ خدانخواستہ ان کےساتھ کوئی حادثہ پیش آجائےکیونکہ اس کےعلاوہ کم ازکم مجھےاورکوئی راستہ نظرنہیں آتا۔ اگرکوئی یہ سمجھ رہاہےکہ مولاناکوگرفتارکرکےیہ ساراٹنٹاختم ہوجائےگاتویہ اس کی بھول ہےکیونکہ اس اقدام سےمعاملات سیاسی افراتفری اورانارکی کی طرف جائیں گے۔ جہاں تک مسلم لیگ ن اورپیپلزپارٹی کےذریعےدباوڈلواکردھرناموخریاملتوی کرانےکاتعلق ہےتومولاناسولافلائیٹ لیکرپہلےہی یہ دروازہ بندکرچکےہیں۔

پانامہ ون اور ٹو کےبعد پیش ہےپانامہ تھری

 سوال بہرحال اب بھی اپنی جگہ برقرارہے: دھرناہوگایانہیں ؟ دوستو 27 اکتوبرزیادہ دورنہیں اورمجھےپورایقین ہےکہ اس سوال کاجواب آپ کو 27 اکتوبرسےپہلےہی مل جائےگا۔  

Muhammad Zaheer

The author is a journalist. He is currently working for a news channel.

Muhammad Zaheer مزید تحریریں

Muhammad Zaheer

Copyright © 2018 News Makers. All rights reserved.